EUROPEUKPothwar.comDailyNews

London; Mayra Zulfiqar a London law graduate shot and strangled on visit to Pakistan ‘after two men fought to marry her’

برطانیہ سے پاکستان آنے والی خاتون مبینہ طور پر قتل

لندن؛ پوٹھوار ڈاٹ کوم۔۔۔محمد نصیر راجہ۔ تھانہ ڈیفنس بی کے ایس ایچ او قاسم نے انڈپینڈنٹ اردو کو بتایا کہ خاتون کی شناخت مائزہ ذوالفقار کے نام سے ہوئی ہے، جو ایک برس پہلے برطانیہ , فیلتھم ، سے پاکستان کسی کی شادی میں شرکت کے لیے آئی تھیں، تاہم اس کے بعد وہ واپس نہیں گئیں اور ڈیفنس میں اپنے کچھ دوستوں کے ہمراہ کرائے کے مکان میں رہنے لگیں۔ایس ایچ او قاسم کے مطابق اطلاع ملنے پر وہ جائے وقوعہ پر پہنچے اور لاش کو اپنی تحویل میں لیا۔انہوں نے بتایا کہ ’خاتون کے کندھے پر گولی کا زخم تھا لیکن موت کی اصل وجہ ان کے پوسٹ مارٹم اور فرانزک رپورٹ کے بعد معلوم ہوگی کہ آیا موت صرف گولی لگنے کی وجہ سے ہوئی یا ان کا گلا بھی دبایا گیا ہے۔‘ایس ایچ او قاسم نے بتایا کہ مقتولہ کے قتل کی ایف آئی آر ان کے پھوپھا کی مدعیت میں دفعہ 302 تعزیرات پاکستان کے تحت درج کر لی گئی ہے۔ایف آئی آر میں درج مقتولہ کے پھوپھا کے بیان کے مطابق ان کی بھتیجی، جو کہ لندن سے پاکستان آئی ہوئی تھیں، کچھ روز قبل ان سے ملنے ان کے گھر آئیں اور شکایت کی کہ ان کے دو دوست انہیں دھمکیاں دے رہے ہیں اور انہیں ان سے جان کا خطرہ ہے۔

London; A London law graduate was murdered in her flat after refusing to wed two friends fighting for her hand in marriage.

Mayra Zulfiqar, 26, was reportedly shot and strangled by suspects who broke into her apartment in what police believe was a crime of passion in Lahore.

She had moved to Pakistan just two months ago from Feltham, west London, where she was a law student at Middlesex University and went on to work as a paralegal at law firm.

She had been renting an apartment with a friend in the Defense area of Lahore where she was discovered dead by her uncle next to her phone.

Her uncle who filed a legal claim against the two suspects rushed to Mahira’s flat to find her lying in a pool of blood. She was already died and was bleeding from the neck, according to the report he filed.

Show More

Related Articles

Back to top button