UKDailyNews

London; ATMs will charge 95p to take out cash

برطانیہ بھر کی اے ٹی ایم مشینوں سے پیسے نکلوانے پر پچانوے پنس اضافی کٹوتی عائد کرنے کا فیصلہ

سلاؤ۔ یوکے ; برطانیہ بھر میں اب اے ٹی ایم سے پیسے نکلوانے پر اب پچانوے پنس اضافی چارج ادا چارج لگیں گے۔ عموما اپ بڑے بینکوں کی جانب سے لگائی گئی مشینوں سے فری رقم نکلوا سکتے تھے اور پراہیویٹ کمپنیوں کی جانب سے لگی مشینوں سے ایک پاونڈ پچاسی پنس چارج لگتا تھا اب مزید برطانیہ کے پانچ ہزار کیش پوائنٹ بھی پچانوے پنس چارج کریں گے کیونکہ برطانیہ بھر میں فری کیش مہیا کرنے والی فرم نے فیصلہ کیا ہے کہ وہ اپنی دس ہزار پانچ سو مشینوں میں سے پانچ ہزار مشینوں پر چارج لگائیں گئے بینکوں کی جانب سے فنڈز روکے جانے کی وجہ سے یہ فیصلہ کیا گیاہے لنک کیش مشینوں کی تقریبا پچاس ہزار مشینیں اب بھی فری آف چارج ہیں اس فیصلے سے دیہاتی علاقوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑے گا ۔

London; The firm behind a fifth of the country’s free cash machines is to start charging customers nearly £1 a time to take their money out.

Note machine will charge for many of its 10,500 devices following changes to how the ATMs are funded.

The new fee will deal a brutal blow to the elderly, families and small businesses – with the axe likely to fall hardest in rural and suburban areas.

It also paves the way for many machines to be shut down completely if they are still unprofitable after the switch.


عمران خان مضبوط اعصاب کے مالک ہیں۔ پاکستان مضبوط ہو گا

Pakistani community say Pakistan is in safe hands with Imran Khan

سلاؤ۔ یوکے ;  عمران خان مضبوط اعصاب کے مالک ہیں۔ پاکستان مضبوط ہو گا۔ پاکستانی کمیونٹی۔ برطانیہ میں مقیم پاکستانی کمیونٹی سے تعلق رکھنے والے پاکستان تحریک انصاف کے راہنماؤں راشد بٹ ( سابق میئر )، ڈاکٹر اخلاق اور عابد حسین نے اپنے ایک مشترکہ بیان میں کہا ہے کہ پاکستان اب مضبوط ہاتھوں میں ہے۔ وزیر اعظم عمران خان مضبوط اعصاب کے مالک ہیں۔ اور پاکستان مضبوط اور خوشحال ہو گا۔ وزیر اعظم عمران خان نے اپنی کابینہ میں ردو بدل پاکستانی عوام کی خاطر کیا ہے۔ تاکہ اعلی کارکردگی دکھانے والے وزراء آ گئے آئیں۔ افراط زر پر قابو پایا جا سکے۔ مہنگائی کنٹرول ہو اور عوام کو سستا روزگار اور فوری انصاف میسر آئے۔


سابق میئر آف سلاؤ راشد بٹ برطانیہ واپس آ گئے

Ex Mayor of Slough Rashid Butt returns to UK

سلاؤ۔یوکے;  سابق میئر آف سلاؤ راشد بٹ برطانیہ واپس آ گئے۔پاکستانی کمیونٹی سے تعلق رکھنے والے سابق میئر آف سلاؤ یوکے، سابق برطانوی کونسلر، سابق جنرل سیکرٹری پاکستان ویلفیئر ایسوسی ایشن سلاؤ اور پاکستان تحریک انصاف کے راہنماء جناب راشد جاوید بٹ پاکستان میں چند ماہ کے قیام کے بعد واپس برطانیہ پہنچ آئیں ہیں۔ وہ گزشتہ برس نومبر کے مہینہ میں گجرات، پنجاب پاکستان گئے تھے۔ اور حال ہی میں اپریل 2019ء کو انکی واپسی ہوئی ہے۔


خورشید حسن خورشید ( کے ایچ خورشید ) مرحوم کی اکتیسویں برسی پر 6 اپریل 2019ء بروز ہفتہ کو برمنگھم میں ایک سیمینار کا اہتمام

Seminar organised on 31st death anniversary of KH Khurshid in Birmingham

برمنگھم۔یوکے,;  کے ایچ خورشید کے کشمیر فارمولے پر عملدرآمد نہ ہونے سے مسئلہ کشمیر حل نہ ہو سکا۔ ڈاکٹر مسفر۔ آزاد کشمیر کے سابق صدر ، بانئی پاکستان قائد اعظم محمد علی جناح کے پرائیویٹ سیکرٹری، جموں و کشمیر لبریشن لیگ کے بانی اور عظیم کشمیری راہنماء ’’ خورشید ملت ‘‘ جناب خورشید حسن خورشید ( کے ایچ خورشید ) مرحوم کی اکتیسویں برسی پر 6 اپریل 2019ء بروز ہفتہ کو برمنگھم میں ایک سیمینار کا اہتمام کیا گیا۔ سیمنار کا انعقاد جموں و کشمیر لبریشن لیگ یوکے یورپ نے کیا تھا۔ اس موقع پر سیمنار سے خطاب کرتے ہوئے جموں کشمیر لبریشن لیگ یوکے و یورپ کے مرکزی صدر جناب ڈاکٹر مسفر حسن ( سابق برطانوی کونسلر ) نے کہا کہ خورشید ملت جناب کے ایچ خورشید لبریشن لیگ کے ہی نہیں بلکہ پوری کشمیری قوم کے عظیم لیڈر اور بے لوث راہنماء تھے۔ جن کی ساری زندگی جہد مسلسل سے تعبیر ہے۔ ڈاکتر مسفر حسن نے کہا کہ آج تک مسئلہ کشمیر اس وجہ سے حل نہیں ہو سکا کہ خورشید فارمولہ پر عمل درآمد نہیں ہو سکا۔ کشمیر کے مسئلہ کا واحد حل یہی ہے کہ فلسفۂ خورشید اور افکار پر عمل پیرا ہو کر منقسم ریاست جموں و کشمیر پر مشتمل ایک باختیار آزاد حکومت قائم کی جائے۔ انہوں نے کہا کہ آج ہم اپنے قائد جناب کے ایچ خورشید کی 31ویں برسی منا رہے ہیں۔ کے ایچ خورشید 1924ء میں سرینگر کشمیر میں پیدا ہوئے تھے۔ قائد اعظم کے سیکرٹری رہے۔ برطانیہ سے بیرسٹری کی۔ آزاد کشمیر کے صدر رہے۔ 11 مارچ 1988ء کو ایک عام مسافر بس میں میرپور سے لاہور جاتے ہوئے حادثہ میں انتقال کر گئے تھے۔ ان کی میت کو مظفرآباد آزاد کشمیر میں لے جا کر سپرد خاک کیا گیا تھا۔ ان کا پنجاب پاکستان میں سڑک پر بس حادثہ بھی آج تک ایک معمہ بنا ہوا ہے۔ جموں و کشمیر لبریشن لیگ برطانیہ، یورپ کے مرکزی سیکرٹری جنرل بیرسٹر اشرف محمود نے کہا کہ کے ایچ خورشید نے محکومی، غلامی اور مایوسی میں پڑی قوم کو خوشحالی کی امید دلائی تھی۔ مگر افسوس کہ انکے فارمولے پر عمل نہیں کیا گیا۔ورنہ آج کشمیر نہ صرف آزاد ہوتا بلکہ برصغیر میں صحیح معنوں میں ایک سپر پاور ہوتا۔ محمد اخلاق چوہدری نے کہا کہ لبریشن لیگ کے بانی صدر جناب کے ایچ خورشید کشمیر کی تحریک آزادی کے ایک ہیرو تھے بلکہ وہ پاکستان کی آزادی کے ماتھے کا جھومر بھی ہیں۔ جنہوں نے بانئ پاکستان قائد اعظم کے ساتھ انکے پرائیویٹ سیکرٹری کے طور پر اجلاسوں میں شرکت کی تھی۔ برمنگھم میں منعقدہ سیمینار سے مختلف جماعتوں سے تعلق رکھنے والے راہنماؤں نے بھی اپنے اپنے خطاب میں جناب کے ایچ خورشید مرحوم کو خراج عقیدت پیش کیا اور انکے حالات زندگی، افکار اور نظریات پر روشنی ڈالی۔ ان میں چوہدری بشیر رٹوی، محمود کشمیری، عباس بٹ، ارشاد ملک، محمد طاہر بوستان، محترمہ نائید خان، غلام حسین، محترمہ رعنا شمع نذیر اور محترمہ رفعت مغل و دیگر تھے۔ مقررین نے کہا کہ خورشید حسن خورشید ہی وہ واحد کشمیری لیڈر تھے۔ جنہوں نے بڑا واضح اور دوٹوک مؤقف اختیار کرکے یہ مطالبہ کیا تھا کہ آزاد خطے کو حقیقی معنوں میں خودمختار اور بااختیار حکومت تسلیم کیا جائے۔ تاکہ کشمیری اپنا مقدمۂ کشمیر عالمی برادری کے سامنے بہتر انداز میں پیش کر سکیں۔ لیکن افسوس کہ انکے فارمولے پر عمل نہیں کیا گیا۔ بیرسٹر اشرف مغل نے کہا کہ ہماری جدوجہد نظریۂ خورشید پر عمل کیلئے ہے۔ تمام نظریات کو ساتھ رکھ کر کشمیر کی آزادی کے لئے ایک ایجنڈے پر عمل پیرا ہونے کی ضرورت ہے۔ سیمینار کی نظامت کے فرائض مرکزی جوائنٹ سیکرٹری جموں و کشمیر لبریشن لیگ یوکے، یورپ محمد اخلاق چوہدری نے سرانجام دئیے۔ سیمنار میں مختلف کشمیری سیاسی جماعتوں اور آزادی پسند تنظیموں سے تعلق رکھنے والے راہنماؤں اور نمائندوں کو مدعو کیا گیا تھا۔ تاکہ خورشید ملت جناب کے ایچ خورشید کے افکار اور نظریات کی روشنی میں موجودہ تحریک آزادئ کشمیر کے تناظر میں تبادلۂ خیال کیا جا سکے۔ سیمنار کے آخر میں شرکاء کو جناب کے ایچ خورشید کی زندگی پر مبنی ایک ڈاکومنٹری فلم بھی دکھائی گئی۔ 

Show More

Iftikhar Warsi

Tel 0044-7445881151

Related Articles

Back to top button
Close